in , , ,

Medical and psychological benefits of shedding tears

Medical and psychological benefits of shedding tears
Medical and psychological benefits of shedding tears

Medical and psychological benefits of shedding tears

Medical and psychological benefits of shedding tears
Medical and psychological benefits of shedding tears

آنسو بہانے کے طبی و نفسیاتی فوائد
Medical and psychological benefits of shedding tears
الفوائد الطبية والنفسية لذرف الدموع
حکیم المیوات:قاری محمدیونس شاہد میو

قران کریم اور احادیث مبارکہ میں کئی مقامات پر رونے اور آنسو بہانے کا ذکر موجود ہے۔اس کے فضائل و مناقب بھی موجود ہیں۔

طب نبوی اور قران کریم و ذخیرہ احادیث کو بغور مطالعہ کیا جائے تو آنسو بہانے کی بہت سی نفسیاتی و طبی وجوہات مذکور ہیں۔

انسان کو اپنے خالق حقیقی کی محبت میں اور مخلوق کی ہمدردی میں آنسو بہانے کے لئے مواقع کی تلاش میں رہنا چاہیے- اسی لئے اردو شاعری میں کہا گیا ہے کہ “بڑے کام کا ہے یہ آنکھوں کا پانی”- ویسے آنسوؤں کا استعمال آج طب کی دنیا میں کس حد تک ہو رہا ہے اس کا اندازہ اس رپورٹ سے کیا جاسکتا ہے کہ کینیڈا کے ایک بائیوکیمیکل انجینئر نے آنکھوں کے لئے ایسے Contact Lenses تیار کئے ہیں جو جسم کے اندر، خون میں موجود، شوگر کی تبدیل ہوتی ہوئی سطح کی نشاندہی کرسکیں گے۔ چنانچہ ذیابیطس کے مریضوں کو اپنا خون نکالے بغیر ہی اپنی آنکھ کے لینز کا رنگ دیکھ کر، خون میں اپنی شوگر کی سطح معلوم ہوسکے گی۔ خون میں شوگر کی سطح میں کمی یا زیادتی سے اِن لینزز کا رنگ تبدیل ہوجائے گا کیونکہ اِن کی تیاری میں ایسے کیمیائی مادے استعمال کئے گئے ہیں جو آنکھوں کو نقصان پہنچائے بغیر آنسوؤں میں موجود گلوکوز کے ساتھ مل کر، لینز کا رنگ تبدیل کرسکیں گے۔

 

آنسو بہانے کی ضرورت

اسی طرح سائیکالوجسٹ کی ایک رپورٹ میں آنسو بہانے کی ضرورت کو بیان کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ زاروقطار رونا انسانی صحت کیلئے بہت ضروری ہے۔ ماہرین کے مطابق آنسوؤں کے ساتھ رونے کا عمل آنکھوں کے لئے ایک مؤثر تھراپی کی حیثیت رکھتا ہے جس کے نتیجے میں آنکھوں کی کارکردگی بہتر ہوتی ہے۔ دوسرے لفظوں میں یہ بھی کہا جا سکتا ہے کہ ایسے لوگ جو شدید دکھ یا صدمے کی حالت میں بھی رونے سے گریز کرتے ہیں وہ اکثر جذبات کی شدت محسوس کرنے میں ناکام رہتے ہیں۔ یعنی ایسے لوگ زندگی کے خوبصورت تجرِبات سے وہ خوشی حاصل کرنے میں بھی ناکام رہتے ہیں جو عام لوگوں کو حاصل ہوتی ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق رونے کا عمل اور اس کی وجوہات تاحال ان کے لئے معمے کی حیثیت رکھتی ہیں لیکن اس کے باوجود وہ اس کے فوائد و نقصانات جاننے میں کامیاب ہو چکے ہیں۔ حالیہ تحقیق کے مطابق رونے کا عمل انسان کے جذباتی زخموں کو تیزی سے مندمل کردینے کا باعث بنتا ہے۔

بیسل آنسو۔ یہ آنسو سارا دن آپ کی آنکھوں کو لپیٹے رہتے ہیں۔ پلک جھپکنے سے انہیں آپ کی آنکھوں کی سطح پر یکساں طور پر پھیلانے میں مدد ملتی ہے۔ وہ آپ کے وژن کو بہتر بنا سکتے ہیں، آپ کی آنکھوں کو ہائیڈریٹ کر سکتے ہیں، اور آپ کی توجہ کو تیز کر سکتے ہیں۔ وہ آپ کی آنکھوں کی حفاظت کرتے ہیں اور ملبے کو باہر رکھتے ہیں۔ آپ کے آنسو آپ کی آنکھوں کی سطح پر آکسیجن اور غذائی اجزاء بھی پہنچاتے ہیں۔

خارجی محرکات

١ – محرکات کی موجودگی، کوئی بھی ایسی چیز جس کی بدبو آنکھ کو پسند نہ ہو، جیسے پیاز۔
١ – آنکھ میں کوئی عجیب و غریب چیز داخل ہونے سے آنکھ کو چوٹ لگنا، جیسے مچھر اور گندگی۔
– خوشی، بہت سے لوگ آنسوؤں کے ساتھ روتے ہیں جب ان کے ساتھ کوئی خوشی کی بات ہوتی ہے، اور ایسا لگتا ہے کہ خوشی کی وجہ بہت مضبوط ہے اور غیر متوقع

ہونے کی خصوصیت ہے۔
آنسوئوں کے طبی فوائد

تجرِبہ گاہ میں آنسوؤں کے کیمیائی تجزیئے کے بعد مرتّب کی جانے والی ایک رپورٹ میں بھی یہ بتایا گیاہے کہ صدمے کی حالت میں آنکھوں سے آنسوئوں کی صورت جو پانی باہر آتا ہے وہ پیاز کاٹنے یا آنکھ میں کچھ گرجانے پر آنکھ میں آنے والے پانی کے برعکس کئی طرح کے کیمیائی اجزاء پر مشتمل ہوتا ہے۔ ا س قسم کے آنسو اگر کم مقدار میں بھی بہائے جائیں تو اس کے نتیجے میں نہ صرف شریانوں میں خون کے قطرے جمنے کا عمل سست ہوجاتا ہے ۔ بلکہ جِلد سے متعلقہ مسائل میں بھی بہتری واقع ہوتی ہے اور خون میں کولیسڑول کی مقدار بھی کم ہو جاتی ہے۔

نفسیاتی دبائو اور آنسوئوں کی اہمیت

پروفیسر ولیم فر کہتے ہیں کہ طویل عرصے پر محیط جذباتی اور نفسیاتی دباؤ کی صورت میں دل کے دورے کے امکانات میں اضافہ ہوجاتا ہے جس کے نتیجے میں دماغ کے کچھ حصوں کو بھی شدید نقصان پہنچتا ہے جبکہ اس کے برعکس رونے کی صورت میں انسانی صحت پر مُثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔
جذباتی آنسوؤں میں دیگر قسم کے آنسوؤں کے مقابلے میں زیادہ تناؤ کے ہارمونز اور قدرتی درد کش ادویات ہوتے ہیں۔ وہ ایک علاج کا کردار ادا کرتے ہیں، جسے “اچھی رونا” بھی کہا جاتا ہے۔ جذباتی رونا، جو آپ کو بہتر محسوس کرتا ہے، شفا یابی کے عمل کا ایک حصہ ہو سکتا ہے۔ لیکن ماہرین کو اس بات کی تصدیق کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

رونے کے دوران حساسیت

یونیورسٹی آف سائوتھ فلوریڈا میں کی جانے والی ایک حالیہ تحقیق کی روسے رونے کے عمل کے دوران جلد کی حساسیت بڑھ جاتی ہے اور گہرے سانس لینے کا عمل تیز ہوجاتا ہے اور اِن دونوں چیزوں کو صحت کے لئے اچھی علامات کہا جاتا ہے ۔ اس طرح یہ بھی کہا جاسکتا ہے کہ رونے کا عمل جہاں ایک طرف جذبات کی شدت کی نشاندہی کرتا ہے وہیں دوسری طرف نفسیاتی طور پر انسان کو بہتری کی جانب مائل کرکے اس کی شخصیت میں توازن بحال کرتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق رونے کا عمل ہر عمر کے افراد کیلئے تھراپی کی حیثیت رکھتا ہے۔ اس لئے ہر عمر کے افراد رونے کے بعد خود کو ہلکا پھلکا اور پہلے سے بہتر محسوس کرتے ہیں۔

آنسوئوںافراط
لیکن آنسو افراطی حیثیت میں کچھ علامات کی نشاندہی کرتے ہیں۔
نا امید، بے بس، اداس محسوس کرنا
روزمرہ کی زندگی میں دلچسپی کا نقصان
بھوک نہ لگنا یا زیادہ کھانا
خراب نیند
جرم یا بے وقعت کے ضرورت سے زیادہ جذبات
اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ کو ڈپریشن ہے، تو فوراً اپنے معالج سے بات کریں تاکہ آپ کا صحیح علاج تلاش کیا جا سکے۔

آنسو آنکھوں کے محافظ

آنسوؤں کو آنکھوں کی حفاظت کرنے میں‌ بھی اہمیت حاصل ہے چنانچہ کمپیوٹر اسکرین کے بداثرات سے بچانے کے لئے ماہرین نے ایک رپورٹ میں بیان کیا ہے کہ اگر پپوٹوں حرکت نہ دی جائے اور آنکھیں مسلسل کھلی رہیں تو آنکھ کی بیرونی سطح پر موجود آنسو زیادہ تیزی سے بخارات بن کر اڑ جاتے ہیں اور اس سے آنکھیں خشک ہوجاتی ہے۔ علاوہ ازیں بعض دفاتر میں ہوا میں نمی کم ہوتی ہے یا خشک ہوتی ہے اس سے آنسوؤں کے بخارات بن کر اڑنے کی رفتار تیز ہوجاتی ہے۔ ماہرین یہ مشورہ دیتے ہیں کہ کمپیوٹر پر کام کے دوران آنکھوں پر پڑنے والے دباؤ کو کم کرنے کے لئے زیادہ سے زیادہ پلکیں جھپکائی جائیں۔ بہرحال آنکھوں‌کی نمی آنکھوں‌کی حفاظت کا عمدہ ذریعہ ہے-

اگر آپ کسی کے آس پاس ہیں جو رو رہا ہے:

ان کے دکھ، شرمندگی، یا درد کو تسلیم کریں اور ان کے جذبات کے لیے ہمدردی کا اظہار کریں۔
ان کے آنسوؤں کا احترام کریں۔ انہیں اپنے جذبات کو آزاد کرنے دیں اور انہیں دکھائیں کہ آپ کی پرواہ ہے۔
مشورہ دینے یا کچھ کہنے میں جلدی نہ کریں۔ انہیں عمل کرنے اور ان کے آنسوؤں کو دور کرنے کے لیے جگہ دیں۔
جب وہ آپ کو بتا دیں کہ وہ بات کرنے کے لیے تیار ہیں، ان کے جذبات کو نیویگیٹ کرنے میں ان کی مدد کریں۔ ہمدرد رہیں کیونکہ آپ سنتے ہیں کہ وہ کیوں روئے اور اب وہ کیسا محسوس کرتے ہیں۔
زیادہ بات نہ کریں۔ انہیں سوچنے اور اپنے خیالات کو منظم کرنے دیں۔
اس لمحے میں جس طرح سے وہ جواب دیتے ہیں اسے قبول کریں۔ انہیں مختلف طریقے سے محسوس کرنے پر مجبور نہ کریں۔
رونے کی کوشش نہیں کرنا

رونے کے فائدے:

رونا جو یہاں کسی وجہ سے آنسو بہانے کو کہا جاتا ہے، بعض صورتوں میں اس کے فائدے ہیں اور بعض میں نقصانات ہیں۔
– آنسوؤں سے آنکھوں کو دھونا، جو جراثیم کو تباہ کرنے والے جراثیم کش کی نمائندگی کرتا ہے۔
– روح میں چھائی ہوئی اداسی کو جاری کرنا، جو نفسیاتی سکون کا سبب بنتا ہے۔
– تناؤ اور اضطراب کی حالت کا خاتمہ جو ایک شخص کو متاثر کرتا ہے، خاص طور پر اگر اس کی وجہ کسی غیر متوقع معاملے میں خوشی ہو۔
– رونے والے یا رونے والے کی ضرورت کے بارے میں دوسروں کو خبردار کرنا، رونے کے وقت ان کی نرمی اور ہمدردی کا اظہار کرنا۔
– آنسو کے غدود کو ان کے کام میں چلائیں تاکہ ان میں جمود یا یاداشت کی جزوی کمی نہ ہو۔

Written by admin

Leave a Reply

Your email address will not be published.

GIPHY App Key not set. Please check settings

آج پھر دل کے زخم دوبارہ ہرے ہوگئے۔۔۔

آج پھر دل کے زخم دوبارہ ہرے ہوگئے۔۔۔

نجومی جنتری 2023۔Astrology Jantri 2023